World

’میری ماں کو شراب کی لت تھی اور یہ ہمارے خاندان کا سب سے بڑا راز تھا‘

  • سارا میک ڈرموٹ
  • بی بی سی نیوز

شراب نوشی کے عادی والدین کے ساتھ بڑا ہونے سے بچوں پر کئی صورت میں بے پناہ اثرات مرتب ہو سکتے ہیں۔ الکوحل کے عادی افراد کے بچوں کے ڈپریشن اور سکول میں مشکلات کے شکار ہونے اور گھر میں استحصال اور تشدد کا نشانہ بننے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں۔ بیکی ایلس ہیملٹن کی طرح کئی لوگوں کو لگتا ہے کہ وہ بالغ ہونے کے بعد بھی اب تک اپنے والدین کی شراب نوشی سے متاثر ہوئے ہیں۔

یہ سنیچر کی رات تھی اور 13 سالہ بیکی اپنی والدہ پیٹ کی مدد کر رہی تھیں تاکہ وہ باہر جانے کے لیے تیار ہو سکیں۔ پیٹ اپنی زیادہ تر ہفتہ وار تعطیلات اسی سڑک پر واقع اپنے پارٹنر کے گھر پر گزارتیں اور بیکی کو ان کی نانی کے ساتھ گھر پر چھوڑ جایا کرتیں۔

باتھ روم میں پیٹ ٹوائلٹ کی سیٹ پر بیٹھی تھیں اور بیکی ان کی آنکھوں میں کونٹیکٹ لینس ڈال رہی تھیں۔ اس کے بعد انھوں نے آہستگی سے اپنی والدہ کی آنکھوں پر آئی شیڈو لگایا اور انھیں پھر ایک گلابی لپ سٹک لگائی۔

بیکی کہتی ہیں: ’مجھے اس وقت جو بھی اچھا لگتا میں ان کا میک اپ ویسے ہی کر دیا کرتی اور وہ بھی اسی کے ساتھ چلی جاتیں۔‘


Source link

International Updates by Focus News

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button