World

وسطی ایشیا کی سیاست: روس اور چین قازقستان پر نظریں کیوں جمائے بیٹھے ہیں؟

  • دلمراد علیویے
  • صحافی

،تصویر کا کیپشن

چین، روس اور قازقستان کے سربراہان

قازقستان کے حکام نے حالیہ دنوں میں ملک کی جغرافیائی خودمختاری اور سالمیت کے بارے میں بیانات دینے کے سلسلے کو تیز کر دیا ہے اور وہ بڑے شد و مد سے شہریوں کے اپنے مادر وطن کے دفاع کے حق کو جتا رہے ہیں۔

ان ہی خطوط پر تازہ بیان ملک کے صدر قاسم جومارٹ ٹوکائیونے کی طرف سے پانچ جنوری کو اخبارات میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں سامنے آیا جس میں انھوں نے کہا تھا کہ قازقستان کے لوگوں کو اپنی مقدس زمین اپنے آباؤ اجداد سے ورثے میں ملی ہے اور وہ ہر طریقے سے اس کا تحفظ کریں گے۔

یہ بیانات قازقستان کی علاقائی سرحدوں کے بارے میں تسلسل کے ساتھ کیے جانے والے دعوؤں کے ردعمل میں دیے جا رہے ہیں۔ گذشتہ سال دسمبر میں روس کے دو منتخب نمائندوں کی طرف سے قازقستان سے متعلق بیان دیا گیا تھا اور اس سے قبل اپریل میں چین کی ایک ویب سائٹ پر بھی اسی بارے ایک مضمون شائع کیا گیا تھا۔

ان دونوں ممالک کا کہنا ہے کہ قازقستان ماضی ان کا حصہ رہا ہے اور وہ اسے دوبارہ اپنا حصہ بنانا چاہتے ہیں۔


Source link

International Updates by Focus News

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button